22

ترکی میں جرمن سیاحوں پر خودکش حملہ کیس میں 4 ملزمان کو عمر قید، 18 بری – ایکسپریس اردو

اس حملے کا الزام داعش پر لگایا گیا تھا تاہم کسی گروپ نے اس کی ذمہ داری قبول نہیں کی تھی۔

 انقرہ: ترکی کی عدالت نے جرمن سیاحوں پر خودکش حملہ کیس میں 4 ملزمان کو جرم ثابت ہونے پر عمر قید کی سزا سنادی اور 18 ملزمان کو بری کردیا۔

غیر ملکی خبر رساں ادارے کے مطابق جنوری 2016 میں ترکی کے مرکزی شہر استنبول میں مشہور سلطان احمد چوک میں نیلی مسجد اور آیا صوفیہ کے قریب خودکش حملہ ہوا تھا جس میں 12 جرمن سیاح ہلاک اور 16 افراد زخمی ہوگئے تھے۔ اس حملے کا الزام داعش پر لگایا گیا تھا تاہم کسی گروپ نے اس کی ذمہ داری قبول نہیں کی تھی۔

عدالت نے اس حملے میں ملوث ہونے اور سہولت کاری کے الزام میں 4 افراد کو عمر قید کی سزا دیتے ہوئے قرار دیا کہ اس حملے سے پرتشدد طور پر آئین کو پامال کرنے کی کوشش کی گئی۔

ملزمان نے صحت جرم سے انکار کردیا۔ عدالت نے جان بوجھ کر لوگوں کو قتل کرنے کے جرم میں ہر ملزم کو 328 سال اور 4 ماہ قید کی علیحدہ سزا بھی سنائی۔ حکام نے یہ نہیں بتایا کہ ملزمان کا تعلق کس ملک سے ہے۔

اسی حملے میں ملوث ہونے پر ترک ججز نے 2018 میں 3 شامی شہریوں کو عمر قید کی سزا دی تھی تاہم اعلیٰ عدالت نے اس سزا کیخلاف اپیل منظور کرلی تھی۔





Source link

Spread the love

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں