13

حکومت نے معاہدے کی خلاف ورزی کی تو لائحہ عمل کا اعلان کرینگے، سربراہ تحریک لبیک – ایکسپریس اردو

ایسی صورت میں مرکزی مجلس شوری کا اجلاس بلا کر فیصلہ کیا جائے گا، نو منتخب امیر حافظ سعد رضوی (فوٹو : فائل)

 لاہور: تحریک لبیک پاکستان کے نئے امیر حافظ سعد رضوی نے کہا ہے حکومت نے معاہدے کی خلاف ورزی کی تو تحریک لبیک بھی لائحہ عمل کا اعلان کرے گی تاہم معاون خصوصی وزیراعظم طاہر اشرفی نے تحریک لبیک کو معاہدے پر عمل درآمد کی یقین دہانی کرائی ہے۔

ایکسپریس نیوز کے مطابق تحریک لبیک کے نومنتخب امیر اور علامہ خادم حسین رضوی کے بڑے صاحبزادے حافظ سعد رضوی نے کہا ہے کہ حکومت نے تحریک کی مرکزی شوری کے ممبران کے ساتھ جو معاہدہ کیا تھا امید ہے کہ حکومت اس پرعمل کرے گی لیکن اگر حکومت اس معاہدے سے روگردانی کرتی ہے تو پھر ہم بھی اپنے آئندہ کے لائحہ عمل کا اعلان کریں گے، ایسی صورت میں مرکزی مجلس شوری کا اجلاس بلا کر فیصلہ کیا جائے گا۔

دوسری جانب وزیراعظم کے معاون خصوصی حافظ طاہر محمود اشرفی نے کہا ہے کہ تحریک لبیک کی قیادت کے ساتھ حکومت نے جو معاہدہ کیا ہے اسے پورا کیا جائے گا۔

تحریک لبیک کے نئے امیر کا فیض آباد دھرنے میں اہم کردار

 تحریک لبیک پاکستان کے نوجوان امیرحافظ سعد رضوی غیر شادی شدہ ہیں، انہوں نے انٹر کے بعد درس نظامی کیا، تحریک لبیک کے سوشل میڈیا ونگ کوبھی دیکھتے رہے ہیں جبکہ فیض آباد دھرنے کی پلاننگ میں بھی ان کا اہم کردارتھا، وہ اپنے والد کے سب سے زیادہ قریب اور تحریکی کاموں میں سمجھ بوجھ رکھتے ہیں۔

یہ بھی پڑھیں : سعد حسین رضوی تحریک لبیک پاکستان کے نئے امیر مقرر

تحریک لبیک کے مرکزی رہنما اظہرحسین نے ’’ایکسپریس‘‘ سے بات کرتے ہوئے بتایا کہ حافظ سعد رضوی طبیعت کے اعتبارسے انتہائی باادب اور  ملنسار ہیں، پروٹوکول کے قائل نہیں بلکہ خود اپنے ہاتھوں سے کام کرنے والی شخصیت ہیں، کارکنان کے ساتھ ان کا انتہائی محبت اور پیار کا رشتہ ہے اور وہ اپنے والد گرامی کی زندگی میں بھی تحریکی امور کو دیکھتے رہے ہیں۔





Source link

Spread the love

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں