13

مشترکہ مفادات کونسل کا اجلاس ؛ مردم شماری کے نتائج پر دوبارہ غور کرنے کا فیصلہ۔ ایکسپریس اردو

چار گھنٹے جاری رہنے والے اس اجلاس میں چار وزرائے اعلیٰ ، وفاقی وزراء اور اعلی عہدیدار شریک ہوئے۔ تصویر: فائل

اسلام آباد: وزیر اعظم کی زیرصدارت مشترکہ مفادات کونسل کے اجلاس میں کونسل کے مستقل سکریٹریٹ کی منظوری دی گئی۔ مردم شماری کے نتائج جاری کرنے کے معاملے پر پیر کو ایک بار پھر اجلاس طلب کرنے کا فیصلہ کیا گیا ہے۔

مشترکہ مفادات کونسل کا اجلاس وزیر اعظم کی زیر صدارت ہوا۔ چار گھنٹے جاری رہنے والے اس اجلاس میں چاروں صوبوں کے وزرائے اعلیٰ سمیت وفاقی وزراء اور اعلی عہدیدار شریک ہوئے۔

اجلاس میں مردم شماری کے نتائج جاری کرنے کے معاملے پر تفصیل سے تبادلہ خیال کیا گیا۔ مردم شماری کے نتائج جاری کرنے کے لئے پنجاب اور خیبرپختونخوا ، جبکہ وزیر اعلی سندھ نے مردم شماری کے نتائج کے اجراء کے معاملے کو نئی مردم شماری سے جوڑنے کا مطالبہ کیا۔

مشترکہ مفادات کونسل کا اجلاس پیر کے روز دوبارہ مردم شماری کے نتائج کے حوالے سے وزیر اعلی بلوچستان کے مطالبہ کرنے کے بعد دوبارہ تشکیل دیا گیا ہے۔

مشترکہ مفادات کونسل کے اجلاس میں نیپرا کی جانب سے بتایا گیا کہ سندھ میں لوڈشیڈنگ کے خاتمے کے لئے صوبے کو 3800 میگاواٹ اضافی بجلی فراہم کی جائے گی۔ وزیراعلیٰ بلوچستان جام کمال نے بڑھتی آبادی کے پیش نظربلوچستان میں بجلی کی تقسیم کرنے والی ایک اور کمپنی کے قیام کا مطالبہ کیا۔

مشترکہ مفادات کونسل نے امپورٹڈ ایل این جی کی قیمت طے کرنے کی تجویز کو منظوری دے دی۔ اجلاس میں فیصلہ کیا گیا کہ ہائر ایجوکیشن کمیشن ، صوبائی فوڈ اتھارٹیز اور پی ایس کیو سی اے کے امور کا بھی فیصلہ فیڈریشن کرے گی۔





Source link

Spread the love

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں