18

وزیر اعظم قومی اسمبلی کے اجلاس میں اعتماد کا ووٹ۔ ایکسپریس اردو

سینیٹ انتخابات کے بعد پیدا ہونے والی صورتحال کے پیش نظر عمران خان ایوان سے اعتماد کا ووٹ لیں گے (تصویر ، فائل)

اسلام آباد: ہفتے کو قومی اسمبلی کا خصوصی اجلاس بلانے کا فیصلہ کیا گیا ہے جس میں وزیر اعظم عمران خان کو اعتماد کا ووٹ ملے گا۔

قومی اسمبلی کے اسپیکر اسد قیصر نے کہا ہے کہ جب وزیر اعظم کو اعتماد کا ووٹ ملے گا تو 181 ارکان ان کی حمایت میں کھڑے ہوں گے۔

تفصیلات کے مطابق وزیر اعظم کی زیرصدارت اجلاس میں اہم فیصلے کیے گئے اور قومی اسمبلی کے تمام ممبروں کو ہفتے کے روز ہونے والے اجلاس تک اسلام آباد چھوڑنے سے روک دیا گیا ہے۔

وزیر اعظم نے ہدایت کی ہے کہ تمام ممبران اسلام آباد میں ہی رہیں۔ چیف وہپ عامر ڈوگر نے وزیر اعظم کا پیغام تمام ممبران تک پہنچایا۔ تمام ممبران کو قومی اسمبلی کے اگلے اجلاس میں شرکت کو یقینی بنانے کی ہدایت بھی کی گئی ہے۔

قومی اسمبلی کے اجلاس میں وزیر اعظم عمران خان سینیٹ انتخابات کے بعد پیدا ہونے والی صورتحال کے پیش نظر ایوان سے اعتماد کا ووٹ لیں گے۔

قومی اسمبلی کے اسپیکر نے میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کہا آپ یہ کیوں نہیں کہتے ہیں کہ ہماری خواتین امیدوار جیت گئی ہے ، یہ اعتماد اور عدم اعتماد کی بات نہیں ، یہ ایک سیاسی عمل ہے ، ایسا ہمیشہ ہوتا ہے۔

یہ بھی پڑھیں: وزیر اعظم نے ایوان سے اعتماد کا ووٹ لینے کا فیصلہ کیا

دریں اثنا ، وزیر اعظم نے چوہدری پرویز الٰہی کو فون کیا اور سینیٹ انتخابات میں تعاون کرنے پر ان کا شکریہ ادا کیا۔ اسپیکر پنجاب اسمبلی نے عمران خان کو یقین دلایا کہ وہ حکومت کے اتحادی ہیں اور کرتے رہیں گے۔

یہ خبر بھی دیکھیں: سینیٹ کے چیئرمین کا انتخاب بھی بڑے پریشان ہونے کا خدشہ ہے

وزیراعظم عمران خان نے ایم کیو ایم کے کنوینر خالد مقبول صدیقی سے بھی رابطہ کیا۔ وزیراعظم نے تحریک عدم اعتماد کے فیصلے پر خالد مقبول صدیقی کو اعتماد میں لیا اور ایم کیو ایم کے وفد کو ان سے ملنے کی دعوت دی۔ ایم کیو ایم کے ذرائع نے بتایا کہ اعتماد کے حق میں ووٹ ڈالنے کا فیصلہ رابطہ کمیٹی کے اجلاس میں کیا جائے گا۔





Source link

Spread the love

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں